پاکستان میں کرپٹو کرنسی کا کاروبار کرنے کا طریقہ

کرپٹو کرنسی

دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی ڈیجیٹل کرنسی کو تیزی سے مقبولیت حاصل ہوتی جا رہی ہے، آپ کو یہ جان کر حیرت ہوگی کہ پاکستان میں گھریلو خواتین کی ایک معقول تعداد سائیڈ بزنس کے طور پر بٹ کوائن یا ایسی دیگر ڈیجیٹل کرنسیز میں سرمایہ کاری کرنے کی متمنی ہیں۔

روئٹرز کے مطابق آن لائن ڈیجیٹل کرنسیاں پاکستان میں غیر قانونی نہیں ہیں، عالمی سطح پر ان کی مانگ اور مقبولیت میں روز اضافہ ہونے کے باوجود زیادہ تر لوگ اس سے متعلق کم ہی جانتے ہیں، دوسری طرف کچھ لوگوں کی کوششوں سے پاکستان میں یہ ورچوئل کرنسیاں مقبول ہوتی جا رہی ہیں۔

پاکستان میں آن لائن ڈیجیٹل کرنسی کے کاروبار سے وابستہ 38 سالہ ‌غلام احمد ہفتے میں ایک مرتبہ لوگوں کو کرپٹوکرنسی کی ٹریڈنگ اور اس کے شئیرز کی خرید و فروخت کے حوالے سے مفت مشورے دیتے ہیں۔

اسلام آباد کے رہائشی غلام احمد نے ایک واٹس ایپ گروپ بنا رکھا ہے، جس کے ممبران کی تعداد سینکڑوں میں ہے، ڈیجیٹل کرنسیوں کے ماہر احمد ایک ہفتے میں ایک بار اس گروپ میں شریک ہوتے ہیں اور لوگ ان سے آن لائن کرنسیوں کے استعمال اور تجارت کے بارے میں مشورے لیتے ہیں۔

احمد کے واٹس ایپ گروپ میں گھریلو خواتین کی ایک معقول تعداد ہے، جو سائیڈ بزنس کے طور پر بٹ کوائن یا ایسی دیگر ڈیجیٹل کرنسیوں میں سرمایہ کاری کرنا چاہتی ہیں، تاہم بہت سی ممبران روایتی اسٹاک مارکیٹ کی پیچیدگیوں سے لاعلم ہیں لیکن عالمی بُوم کی وجہ سے اب وہ اس کاروبار میں قدم رکھنے کے لیے تیار ہیں۔

احمد کا کہنا ہے کہ واٹس ایپ گروپ میں لوگ کرپٹوکرنسی کے بارے میں بے تحاشا سوالات کرتے ہیں، لوگ اس کے بارے میں جاننا چاہتے ہیں، اور وہ کئی گھنٹوں تک لوگوں کو بنیادی معلومات کے ساتھ ساتھ مفید مشورے بھی دیتے رہتے ہیں۔

غلام احمد نے 2014 میں ملازمت کو خیرباد کہہ دیا تھا اور آن لائن ڈیجیٹل کرنسی کی صنعت میں قدم رکھا تھا، ان کو یقین تھا کی یہ ایک منافع بخش کاروبار ثابت ہوگا اور ہوا بھی ایسے ہی، آج وہ فخر کے ساتھ اپنے اس فیصلے کو اپنی زندگی کا ایک اہم موڑ قرار دیتے ہیں۔

 

SuchTV