روٹس پر چلنے والی پبلک ٹرانسپورٹ کے مالکان نے کرایوں میں من مانااضافہ کر دیا

دینہ(رضوان سیٹھی سے)دینہ میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے ساتھ ہی جنرل بس اسٹینڈ سے دوسرے روٹس پر چلنے والی پبلک ٹرانسپورٹ کے مالکان نے کرایوں میں من مانااضافہ کر دیا، مسافروں کی چیخیں نکلنے لگیں، ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی خاموش تماشائی، مسافر سراپا احتجاج، پنجاب روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی، کمشنر راولپنڈی، ڈپٹی کمشنر سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔تفصیلات کے مطابق پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کو بنیاد بنا کر جنرل بس اسٹینڈ دینہ سے دوسرے اضلاع اور شہروں میں چلنے والی ٹرانسپورٹ کے مالکان نے ازخود نوٹس لیتے ہوئے کرایوں میں غیر معمولی اضافہ کر دیاہے جس کیوجہ سے روزانہ کی بنیاد پر سفر کرنے والے مسافروں کی مشکلات میں اضافہ ہو گیا ہے۔مسافروں کا کہنا ہے کہ ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کا عملہ سرکاری کرائے نامے پر عملدرآمد کروانے میں بری طرح ناکام ہے، ٹرانسپورٹرز نے من مرضی کے کرائے مقرر کرکے مسافروں کی جیبوں کا صفایا کر نا شروع کر رکھا ہے، جبکہ ٹیکسی ڈرائیوروں نے بھی ٹرانسپورٹرز کے نقش قدم پر چلتے ہوئے من مانے کرائے مقرر کرکے شہریوں کی مشکلات میں اضافہ کر دیاہے۔مسافروں نے پنجاب روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی، کمشنر راولپنڈی، ڈپٹی کمشنر سے مطالبہ کیا ہے کہ جنگل کے قانون کا خاتمہ کیا جائے سیکرٹری ڈسٹرکٹ روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کو پنجاب روڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے مقررہ کردہ کرایہ ناموں پر عملدرآمد کروانے کا پابند بنایا جائے تاکہ مسافروں کی مشکلات میں کمی واقع ہو سکے۔