پولیس اسٹیشن آپ کا گھر ہے آپ کی حفاظت اور امن کی علامت ہے.

دینہ(رضوان سیٹھی سے) پولیس اسٹیشن آپ کا گھر ہے آپ کی حفاظت اور امن کی علامت ہے میں آپ کو اس بات کی یقین دہانی کرواتا ہوں کہ اس کھلی کچہری میں آنے والے ہر سائل کی شکایت کا ازالہ ہو گا، میرا کھلی کچہری کا مقصد صرف اور صرف یہ ہے کہ میں ان لوگوں کی بات سن سکوں جو کسی وجہ سے میرے آفس نہیں آ سکتے،میں خود ان کے پاس آ کر ان کی شکایات کا ازالہ کر سکوں ان خیالات کا اظہار ا نعام غنی انسپکٹر جنرل آف پولیس پنجاب کے ویژن کے مطابق اور عمران احمر ریجنل پولیس آفیسر راولپنڈی ریجن کے احکامات پر ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر جہلم شاکر حسین داوڑ نے تھانہ دینہ میں کھلی کچہری سے عوامی مسائل سنتے ہوئے کیا انھوں نے مزید کہا کہ ضلع ہذا میں جھوٹے مقدمات درج کروانے والے مافیا کے خلاف کاروائی میری اولین ترجیح ہے،عوام الناس ایسے گروہ سے بلیک میل نہ ہوں کسی بھی شخص کا غلط چالان نہ ہو گا اور ایسے گروہ کے خلاف ضلع بھر میں سخت سے سخت کاروائیاں جاری ہیں تھانہ کلچر میں تبدیلی اور مقدمہ کے میرٹ پر آسان اندراج پر زور دیتے ہوئے کہا کہ کسی سے بھی زیادتی ہونے پر فوری ازالہ کیا جائے انھوں نے زیر تفتیش مقدمات کو جلد ازجلد میرٹ پر یکسو کرنے اور ان میں ملوث ملزمان کی گرفتاریوں،ایس ایچ اوز تھانہ جات کو تھانہ میں آنے والے سائلین کے ساتھ خوش اخلاقی سے پیش آنے اور ایس ایچ اوز تھانہ جات اور تفتیشی افسران کو ناجائز اسلحہ بردار،منشیات فروشوں،لینڈ مافیا،اشتہاری ملزمان کے خلاف زیرو ٹالرنس کی پالیسی کو اپنانے کے احکامات جاری کیئے،اس موقع پر محمد اکرم DSP صدر سرکل،ایس ایچ او تھانہ دینہ مرزا وقاص،ایس ایچ او تھانہ منگلا کینٹ عبدالغفور،انچارج چوکی سٹی دینہ مرزا تصور،تھانہ دینہ اور تھانہ منگلا کینٹ میں تعینات تفتیشی افسران سمیت لوگوں کی کثیر تعدار بھی موجود تھی،ڈی پی او جہلم نے دینہ منگلا روڈ پر ٹریفک کے مسائل کے متعلق سٹی ٹریفک آفیسر دینہ کو موقع پر بلا کر عوام کے شکایات کے ازالے کے لیے خصوصی احکامات جاری کیئے،کھلی کچہری میں تھانہ ڈومیلی،دینہ،منگلا کینٹ اور تھانہ چوٹالہ کے رہائشی لوگوں نے پولیس سے متعلق شکایات پیش کیں جس پر ڈی پی او جہلم نے فوری طور پر ازالے کی یقین دہانی کروائی اور آخر میں کھلی کچہری میں سائلین کی تھانہ ڈومیلی سے متعلق شکایات پر سید اقبال کاظمی SDPO سوہاوہ سرکل کو موقع پر ہی بذریعہ فون سائلین کی میرٹ کی بنیاد پر دادرسی کے سخت احکامات جاری ہوئے۔