طلبا کو کندن بنانے کے پیچھے ادارہ کی محنت شامل ہوتی ہے،حکیم لطف اللہ

پنڈ دادنخان ( ملک ظہیر اعوان)بیشک طلبا کو کندن بنانے کے پیچھے ادارہ کی محنت شامل ہوتی ہے اور ادارہ صرف عمارت یا سکول کا نام نہیں ہوتا بلکہ اس کے پیچھے باقاعدہ آرگنائزیشن کے طور پر اساتذہ، نصاب،پریکٹیکل لیبز،ماحول بلڈنگ اور ان سب سے اوپر ادارہ کا پرنسپل ہوتا ہے۔جس طرح انسانی جسم میں مختلف آرگن مختلف کام کرکے جسم کو فٹ رکھتے ہیں اور اگر کوئی آرگن اپنا کام چھوڑ دے تو پورا جسم اس سے متاثر ہوتا ہے یہی مثال اداروں کے لئے ہے جو اپنی انتھک محنت اور منیجمنٹ سے ترقی کی سیڑھیاں چڑھتے ہیں اور کامیابیاں انکے قدم چومتی ہیں ان خیالات کااظہار حکیم لطف اللہ سیکرٹری جنرل پاکستان سوشل ایسوسی ایشن نے ایکسپلورویل سکول سسٹم پاکپتن میں منعقدہ تقریب سے کیا انہوں نے مزید کہا کہ بڑھتی ہوئی نمبروں کی دوڑ میں اور میرٹ حاصل کرنا جوۓ شیر لانے کے مترادف ہے اور جس طرح گزشتہ برس کرونا کی وجہ سے تعلیمی ادارے بند رہنے کی وجہ سے طلبا کو تعلیمی اور ہم نصابی سرگرمیوں میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ایسے میں ضلع بھر میں اول پوزیشن حاصل کرنا پرنسپل میاں جہانگیر احمد وٹو کی محنت اور بہترین منیجمنٹ کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ تقریب میں بطور مہمان خصوصی حکیم لطف اللّه سیکرٹری جنرل پی ایس اے، ڈاکٹر شاہد مرتضیٰ چشتی ICI، محمد اسحاق اور غلام رسول پاکستانی کنوینیئر گرین پاکستان کلین پاکستان شرکت نےکی اور قائد اعظم محمد علی جناح کی سماجی تنظیم پاکستان سوشل ایسوسی ایشن کی جانب سے نویں جماعت کے سالانہ امتحانات میں 493/495 نمبر لےکر ساہیوال بورڈ میں تیسری پوزیشن اور ضلع میں اول پوزیشن حاصل کرنے والے طالبعلم علی رضا کو قائد اعظم گولڈ میڈل اور سرٹیفکیٹ عطاء کیا اور باقی پوزیشن ہولڈرز طلباء اور انکے اساتذہ کی حوصلہ افزائی کیلئے تعریفی سرٹیفکیٹ دئیے گئے۔