آج بھی اگر کوئی فرعونیت کی راہ اختیار کرے گا تو وہ بھی عبرت کا نشان ہوگا,امیر عبدالقدیر اعوان

دینہ (ادریس چودھری)
اللہ کریم نے ہر ایک کا رزق اپنے ذمہ لیا ہے ہم اس کو اپنے زورِ بازو حاصل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ دین کے احکامات پر عمل کرنے کا حکم ہے جسے ہم یہ کہہ کر اپنے آپ کو تسلی دے لیتے ہیں کہ اللہ کریم ہم پر رحم فرمائیں گے وہ بڑے معاف کرنے والے ہیں۔نماز کوباقاعدہ اہتمام اور مکمل خشوع و خضوع کے ساتھ ادا کرنے سے حق سے شناسائی کا وہ درجہ نصیب نصیب ہوتا ہے کہ بندہ مومن باعمل ہو جاتا ہے۔
امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ وسربراہ تنظیم الاخوان پاکستان کا جمعتہ المبارک کے موقع پر خطاب۔
انہوں نے کہا کہ رب کریم ہماری ہر ضرورت اور حاجت کو جانتے ہیں اور اس کو پورا کرنے کے لیے اسباب بھی عطا فرمائے اور راہنائی بھی فرمائی۔فرمایا کہ نماز اور صبر سے مدد حاصل کرو۔صبر کی تشریح بیان کرتے ہوئے مولانا امیر محمد اکرم اعوان ؒ فرماتے ہیں کہ سرپٹ دوڑتے ہوئے گھوڑے کو لگام کھینچ کر روک لیا جائے اس طرح اپنے آپ کو پوری قوت سے اللہ کریم کی نافرمانی سے روک لینا صبر کہلاتا ہے نماز کی ادائیگی سے صبر کا حصول ممکن ہوگا۔نماز پڑھنا مجاہدہ اختیاری ہے نمازکی ادائیگی کبھی عادت نہیں بنتی۔اس لیے اس مجاہدے کا اجر بھی بہت زیادہ ہے۔اللہ کریم سے ہی عبادات کی ادائیگی کی توفیق مانگنی چاہیے۔یاد رکھیں کہ جن کے دل میں خشوع ہے ان کے لیے عبادات دشوار نہیں ہیں اور خشوع و خضوع کا حصول شعبہ تصوف کے بغیر ممکن نہیں ہے۔
یاد رہے کہ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ کے تحت ملک بھر ربیع الاول کی نسبت سے بعثت رحمت عالم ﷺ کے موضوع پر جلسوں کا انعقاد ہو رہا ہے جن میں فیصل آباد،ڈیرہ غازی خاں،ایبٹ آباداور بھمبر کشمیر کے جلسے بھی شامل ہیں ان میں حضرت امیر عبدالقدیر اعوان مد ظلہ العالی خصوصی خطاب فرمائیں گے اور اجتماعی دعا بھی ہو گی۔ہر خاص وعام کو شرکت کی دعوت دی جاتی ہے۔