دینہ منشیات کا گڑھ بن چْکا ہے قحبہ خانوں اور سرعام ٹیکے لگانے والوں کی بھرمار

دینہ( ادریس چودھری) دینہ منشیات کا گڑھ بن چْکا ہے قحبہ خانوں اور سرعام ٹیکے لگانے والوں کی بھرمار سنوکر کلبوں میں جْواء منشیات وغیرہ دیدہ دلیری سے جاری ڈی پی او جہلم اور محکمہ اینٹی نارکوٹکس سے اصلاح احوال کی اپیل زعماء دینہ تفصیلات کے مطابق تحصیل دینہ میں منشیات فروش با اثر ہیں جو کہ سرعام موٹر سائکلوں پر گلی گلی کونے کونے آکر منشیات فروخت کرتے دکھائی دیتے ہیں ڈمیلی محلہ اور نئی آبادی دینہ پر زیادہ تر منشیات فروشوں کا قبضہ ہے جو کہ حرام کی دولت کمانے کے چکر میں نئی نسلیں تباہ و برباد کر رہے ہیں جبکہ کئی مقامات پر قحبہ خانے بھی چل رہے ہیں اور سنوکر کلبوں پر تو نوجوان سرعام منشیات استعمال کرتے دکھائی دیتے ہیں اور پاؤڈر کے ٹیکے لگانے والے بھی سرعام ٹیکوں کا استعمال کر کے نئی نسل کو کیا میسج دے رہے ہیں کہ نشے میں دْھت ہو کر ایسے مختلف ہوٹلوں اور چوک چراہوں میں لیٹے رہنا ہے مذید شہریوں نے کہا کہ دینہ ایک پْر امن شہروں میں شامل ہوتا ہے نئی نسل کو نشے کا عادی بنا کر موت کے مْنہ میں دیا جا رہا ہے بوڑھے ماں باپ بے سہارا ہوتے دکھائی دے رہے ہیں اور نشے کی عادت نہ پوری ہونے پر نوجوان چوریوں اور ڈکیتیوں پر اْتر آتے ہیں محکمہ پولیس ڈسٹرکٹ جہلم کے سربراہ نوٹس لے کر چھان بین کریں اور تمام تر تھانوں میں ٹاوٹ مافیا کا صفایا کریں جو کہ ان سماج دْشمنوں کی پشت پناہی کرتے دکھائی دیتے ہیں اور محکمہ پولیس کے آفیسران و ملازمین کی طرف سے دی گئی جان کی قربانیوں کو بھی نظر انداز نہیں کیا جاسکتا لیکن موجودہ چند کالیں بھیڑیں جو کہ محکمہ میں چھپ کر فرض شناس اور ایماندار آفیسروں کا نام بدنام کر رہی ہیں اْن کو بھی بے نقاب کیا جائے تا کہ انصاف کا پلڑہ بھاری رہے