جہلم شہرسمیت مضافاتی علاقوں میں چینی کا مصنوعی بحران سر اٹھانے لگا

جہلم(چوہدری عابد محمود +مرزاکفیل بیگ کیفی)جہلم شہرسمیت مضافاتی علاقوں میں چینی کا مصنوعی بحران سر اٹھانے لگا، مضافاتی علاقوں سمیت شہر کے بیشتر علاقوں میں چینی مہنگے داموں فروخت ہونے لگی،ا ندورن شہر جہاں دستیاب ہے وہاں 88.24 روپے فی کلو کے حساب سے فروخت ہونے کی بجائے 110 روپے فی کلو کے حساب سے فروخت کی جارہی ہے۔ بڑے دکانداروں تاجروں کے گوداموں میں ہزاروں چینی کی بوریاں موجود ہونے کے باوجود چینی کا دستیاب نہ ہونا انتظامیہ کی کارکردگی پر بہت بڑا سوالیہ نشان ہے۔ شہریوں نے انتظامیہ کو حکومتی نرخوں پر چینی فراہم کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق شہر سمیت مضافاتی علاقوں میں حکومتی نرخوں پر چینی فروخت ہونے کی بجائے تاجروں نے 110 روپے فی کلو کے حساب سے فروخت کرنی شروع کر رکھی ہے جبکہ شہرسمیت ضلع بھر میں قائم یوٹیلیٹی سٹورز پر بھی چینی ناپید ہو کر رہ گئی ہے، جس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے دکانداروں نے چینی 110 روپے فی کلو کے حساب سے فروخت کرنی شروع کر رکھی ہے،گزشتہ روز قیمت پنجاب ایپ پر بھی انتظامیہ کی طرف سے چینی کے نرخ 84 روپے فی کلو کے حساب سے مقرر ہیں، قیمت پنجاب ایپ اپڈیٹس نہ ہونے کیوجہ سے شہریوں اور دکانداروں میں جھگڑے گالی گلوچ روز کا معمول بن چکے ہیں، صارفین دکانداروں سے قیمت پنجاب ایپ کے مطابق اشیاء خوردونوش طلب کرتے ہیں جبکہ دکانداروں کا کہنا ہے کہ انتظامیہ جان بوجھ کر ایپ کو اپ ڈیٹ نہیں کرتی جس سے قیمتوں میں تضاد ہونے کیوجہ سے صارفین ہم سے روزانہ لڑائی جھگڑے کرتے ہیں۔ شہریوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب، کمشنر راولپنڈی سے مطالبہ کیا ہے کہ تاجروں کے گوداموں کو چیک کرکے محفوظ کی گئی چینی کو دکانوں پر سرکاری نرخوں کے مطابق فروخت کو یقینی بنایا جائے تاکہ چینی کا بحران پیداہونے سے قبل اس کا سد باب کیا جاسکے۔