معروف شاعر صدارتی ایوارڈ یافتہ ڈرامہ نگار اور محقق نقاد ڈاکٹر طارق عزیز انتقال کرگئے

جہلم(امتیاز بیگ)معروف شاعر صدارتی ایوارڈ یافتہ ڈرامہ نگار اور محقق نقاد ڈاکٹر طارق عزیز انتقال کرگئے۔ وہ دونوں ٹانگوں سے معذور تھے مگر ادب اور فن کی دنیا میں کافی فعال رہے۔ ان کا جنم 10 جنوری 1954 کو جہلم میں ہوا۔ 1978ء میں پنجاب یونیورسٹی سے ایم اے اردو کی ڈگری حاصل کی۔ اور یونیورسٹی میں دوسری پوزیشن پائی۔ اس کے بعد وہ لاہور کے مختلف کالجوں اور یونیورسٹیوں میں پڑھاتے رہے۔ انہوں نے کئی یادگار ٹیلی ویژن ڈرامے لکھے جن میں بسیرا، گیسٹ ہاؤس، اکھڑ، فیصلہ، نوبہار، آنکھ اوجھل، زہر باد، علی بابا، آدھے چہرے، دوپٹہ، بدلتے راستے، کوئی تو ہو، اور موسم موسم پرندے شامل ہیں۔ جبکہ ان کی کتابوں میں تلخیص خطباتِ اقبال، اقبال شناسی اور فولیو، کارل مارکس اور اس کی تعلیمات، اُردو رسم الخط اور ٹائپ، نئی ادبی جہتیں، جلا وطن (شاعری) اور بسیرا (ڈراما) شامل ہیں۔اللہ پاک بخشش اور مغفرت فرمائے-