پنجاب یونیورسٹی کی جانب سے پچھلے کئی سالوں سے ڈگریاں التواء کا شکار

جہلم(چوہدری عابد محمود +سید مظہرعباس)جہلم پنجاب یونیورسٹی کی جانب سے پچھلے کئی سالوں سے ڈگریاں التواء کا شکار، طلباء و طالبات کو اگلی کلاسوں کے داخلوں سمیت نوکریوں کے حصول میں مشکلات کا سامنا، طلباء طالبات کے والدین سمیت شہر کی سماجی، رفاعی، فلاحی تنظیموں کے عمائدین کا ڈپٹی کنٹرولر سرٹیفکیٹ پنجاب یونیورسٹی سے نوٹس لینے کا مطالبہ، تفصیلات کے مطابق گورنمنٹ کالجز سے پاس شدہ طلباء و طالبات نے اخبار نویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے بتایاکہ 2017سے2020 تک کی ڈگریاں تاحال موصول نہیں ہوئیں، حالانکہ پہلے باقاعدگی سے ڈگریاں سرکاری کالجز میں بھجوا دی جاتی تھیں لیکن اب نامعلوم وجوہات کی بناء پر پنجاب یونیورسٹی نے طلباء و طالبات کی ڈگریاں روک رکھی ہیں جس کیوجہ سے طلباء و طالبات میں شدید پریشانی پائی جاتی ہے، جبکہ بچوں کے والدین بھی ڈگریاں نہ ملنے کی وجہ سے تذبذب کا شکار ہیں بچوں کے والدین کا کہنا ہے کہ ڈگریاں نہ ملنے کیوجہ سے نہ تو مزید تعلیم حاصل کر سکتے ہیں اور نہ ہی حصول روزگار کے لئے اداروں سے رجوع کر سکتے ہیں، شہر کی سماجی، رفاعی، فلاحی تنظیموں کے عمائدین نے گورنر پنجاب، ڈپٹی کنٹرولر سرٹیفکیٹ پنجاب یونیورسٹی سمیت محکمہ تعلیم کے ارباب اختیار سے اصلاح و احوال کا مطالبہ کیاہے۔