سینیٹ انتخابات کے نتائج کے بعد عمران خان کو اب شکست تسلیم کرکے استعفیٰ دے دینا چاہیے: بلاول بھٹو

پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلال بھٹو زرداری اور یوسف رضا گیلانی

پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلال بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ سینیٹ انتخابات کے نتائج کے بعد وزیر اعظم عمران خان کو اب شکست تسلیم کر لینی چاہیے اور استعفیٰ دے دینا چاہیے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ‘یوسف رضا گیلانی کی جیت پی ڈی ایم کی تاریخی کامیابی ہے، ہم نے حکومت کو ہر میدان میں شکست دی ہے، یہ اس وزیر خزانہ کی ناکامی ہے جو حکومت چلا رہا ہے’۔

انہوں نے کہا کہ ‘یوسف رضا گیلانی پہلے وزیر اعظم منتخب ہوئے تھے اور اب چیئرمین سینیٹ بھی منتخب ہوں گے’۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ پاکستان کی تمام جمہوری قوتوں اور سیاسی جماعتوں کی جیت ہے اور پاکستان کے جمہوری سفر میں ایک نیا دور شروع ہونے والا ہے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ‘کہتے ہیں خان صاحب اسپورٹس مین ہیں، اب انہیں شکست تسلیم کر لینی چاہیے اور استعفیٰ دے دینا چاہیے، یہ صرف اب اپوزیشن کا نہیں بلکہ حکومتی اراکین کا بھی مطالبہ ہے’۔

انہوں نے کہا کہ جہاں بھی ظلم ہو جمہوریت ہی بہترین انتقام ہے جبکہ پی ڈی ایم نے سینیٹ انتخابات سے پہلے طے کر لیا تھا کہ عدم اعتماد بھی ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ سینیٹ انتخابات کے بعد اپوزیشن کا اگلا قدم لانگ مارچ یا عدم اعتماد ہوگا یہ فیصلہ پی ڈی ایم کرے گی۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ ہم جمہوریت کی بحالی اور اداروں کی مداخلت کو روکنا چاہتے ہیں، عمران خان کی حکومت کی 3 سالہ کارکردگی سب کے سامنے ہے، عوام سمجھ چکے ہیں کہ وہ بجلی کے بلوں اور مہنگائی کا بوجھ ان کی نالائقی کی وجہ سے اٹھا رہے ہیں۔

اس موقع پر سینیٹ کی اسلام آباد سے جنرل نشست پر کامیابی حاصل کرنے والے یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ پی ڈی ایم کی تمام جماعتوں کا شکر گزار ہوں، یہ جمہوریت کی فتح ہے، ضمنی انتخابات میں پی ڈی ایم کی کامیابی کے بعد سب کی نظریں اس نشست پر تھی اور اس میں بھی پی ڈی ایم کو کامیابی ملی۔

انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف نے بھی انہیں فون کرکے اس کامیابی پر مبارکباد دی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم پی ڈی ایم کے صدر مولانا فضل الرحمٰن اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف سے بھی ملاقاتیں کریں گے۔

SuchTV